Home / مشرق وسطیْ / یمنی فوج اور تحریک انصار اللہ کی عدن میں پیش قدمی صدارتی محل پر کنٹرول

یمنی فوج اور تحریک انصار اللہ کی عدن میں پیش قدمی صدارتی محل پر کنٹرول

یمنی فوج اور تحریک انصار اللہ کی صوبہ عدن میں پیش قدمی میں تیزی آ گئی ہے اور صدارتی محل کا کنٹرول بھی سنبھال لیا ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق یمنی فوج اور انصار اللہ کی پیش قدمی کے دوران ان کی عدن صوبے کے وسطی علاقے میں القاعدہ کے دہشت گردوں کے ساتھ جھڑپ ہوئی جس کے بعد یمنی فوج اور انصار اللہ نے بدر چھاؤنی کے علاوہ السعادہ، السلام، الاحمدیہ اور اکتبر علاقوں پر کنٹرول حاصل کر لیا- اس رپورٹ کے مطابق یمن کی فوج اور انصار اللہ کی جمعرات کے روز عدن کے علاقے کریتر میں القاعدہ کے دہشت گردوں کے ساتھ جھڑپ ہوئی- یمن کے میڈیا نے خبر دی ہے کہ انصار اللہ کے جوانوں نے صوبہ عدن میں صدارتی محل پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے-

لبنان کے المیادین ٹی وی چینل نے بھی رپورٹ دی ہے کہ یمن کی فوج اور انصار اللہ کے جوانوں نے عدن میں یمنی فوج کے مفرور کمانڈر محسن الاحمر اور مفرور اور مستعفی صدر عبد ربہ منصور ہادی کے گھر کو اپنی نگرانی کر لیا ہے- د

ریں اثنا یمنی فوج اور انصار اللہ کے جوانوں نے صوبہ عدن کے سب سے اونچے پہاڑ جبل جدید کو القاعدہ کے دہشت گردوں سے پاک کر دیا ہے- یمن کے سکیورٹی ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت دفاع کا ہتھیاروں کا سب سے بڑا ذخیرہ جبل جدید کے پہاڑ پر موجود ہے اگرچہ اس سے پہلے دہشت گرد گروہ القاعدہ نے اسے لوٹ لیا تھا-

دریں اثنا القاعدہ سے وابستہ دہشت گردوں نے صوبہ ” حضر موت” کے مرکزی شہر المکلا میں واقع ایک جیل پر حملہ کردیا جس کے نتیجے میں تین سے داعشی قیدی فرار ہونے میں کامیاب ہوگئےج بتایا جاتا ہے کہ اس جیل سے بھاگنے والوں میں ، داعش کا انتہائی سفاک دہشت گرد” خالد باطرفی” بھی شامل ہے- بتایا جاتا ہے کہ “خالد باطرفی ” چار برس قبل پکڑا گیا تھا اور اسی وقت سے جیل میں قید تھا-

تبصرہ کریں

آپ کی ایمیل یا ویبشایع نہیں کی جائے گی. لازمی پر کریں *

*